80 سال کی عمر میں حفظ قرآن شروع کرنے والی فاطمہ محمد 97 سال کی عمر میں نصف قرآن پاک حفظ کرنے کے بعد انتقال کر گئیں

80 سال کی عمر میں حفظ قرآن

ڈیلی ٹائمز! شارجہ کے علاقے خورفقان کی رہائشی 97 سالہ فاطمہ محمد 17 سالوں میں نصف قرآن پاک حفظ کرنے کے بعد بدھ کے روز انتقال کر گئیں۔فاطمہ محمد کے شریعت کا علم حاصل کرنے اور قرآن پاک حفظ کرنے کے جذبے کی راہ میں انکی عمر بھی حائل نہ ہو سکی۔ مزید برآں، فاطمہ لکھنا پڑھنا بھی نہیں جانتی تھی۔80 سال کی عمر میں فاطمہ نے قرآن پاک حفظ کرنا شروع کیا۔

خلیج اردو کے مطابق وہ روزانہ 600 میٹر چل کر مسجد جاتیں اور وہاں قرآن پاک کی آیات سن کر انہیں زبانی یاد کرتیں۔تاہم 90 سال کی عمر میں بیماری کے باعث وہ چل نہیں پاتیں تھیں، لیکن انہوں نے اپنے بچوں اور پوتوں کی مدد سے گھر پر ہی اپنی موت تک قرآن پاک حفظ کرنے کا سلسلہ جاری رکھا۔ فاطمہ محمد کے پوتے یقوب علی رائیسی نے بتایا کہ انکی دادی کے چار بیٹوں اور بیٹی میں 90 پوتے پوتیاں ہیں۔ فاطمہ نے کئی مساجد بنانے، کویں کھدوانیں اور غریبوں کی بہت مدد کی۔ فاطمہ باحوصلہ اور مضبوط حافظے کی مالک خاتون تھیں، انکے شوہر 50 سال قبل انتقال کر گئے تھے۔ جس کے بعد فاطمہ نے اپنے بچوں کو پڑھایا اور ان کی کفالت کی۔

Leave a Comment