جن کے 32 دانت ہوتے ہیں وہ بہت خوش قسمت ہوتے ہیں کیونکہ

جن کے 32 دانت

ڈیلی ٹائمز! انسانی جسم کا ہر ایک حصہ خدا نے بہت سوچ سمجھ کر بنایا ہے، اگر ذرا سی چھوٹی سی ایک ہڈی بھی جسم کی ٹوٹ جائے یا کم ہو تو انسان شدید تکلیف میں مبتلا ہو جاتا ہے، مگر اس فیچرڈ سائنس نیوز میں ہم آپ کو آج بتا رہے ہیں لوگوں کے دانتوں سے متعلق کچھ ایسی حقیقت جو ہیلتھ لائن فآر ٹوتھ اینڈ سائنس کے ماہرین نے بتائی ہے۔ جس میں ان کا کہنا ہے کہ لوگوں کے 32 دانت کیوں ہوتے ہیں؟

اور کیا ہر کسی کے منہ میں اتنے دانت ہوتے ہیں یا نہیں؟32 دانت والے افراد کو اکثر لوگ کہتے ہی ہیں کہ ارے آپ کے تو 32 دانت ہیں، آپ بہت تیز اور چالاک ہیں، یہ بات ماہرین بھی کہتے ہیں کیونکہ ان لوگوں کا امیون سسٹم بھی تیز ہوتا ہے اور دماغ کی چھٹی حس دوسروں کے مقابلے زیادہ اچھی ہوتی ہے۔32 دانت والے افراد کو اکثر لوگ کہتے ہی ہیں کہ ارے آپ کے تو 32 دانت ہیں، آپ بہت تیز اور چالاک ہیں، یہ بات ماہرین بھی کہتے ہیں کیونکہ ان لوگوں کا امیون سسٹم بھی تیز ہوتا ہے اور دماغ کی چھٹی حس دوسروں کے مقابلے زیادہ اچھی ہوتی ہے۔ان لوگوں کو خوش قمست اس لئے کہا جاتا ہے کیونکہ یہ لوگ جس چیز کی خواہش کرتے ہیں اس کے لیے اسباب بھی بنالیتے ہیں اور یوں ان کی کہی ہوئی بات پوری ہو جاتی ہے اور یہ خوش قمستی سے آگے بڑھتے ہیں۔ایسے لوگ طویل عمر پاتے ہیں، اور 65 سال کی عمر تک بالکل فعال نظر آتے ہیں،

البتہ جسمانی بیماریوں کے باعث کمزور ہو جاتے ہیں، مگر یہ سائنس کہتی ہے کہ ایسے لوگوں کی عمر زیادہ ہوتی ہے۔

ٹرین کے آخری ڈبے میں یہ نشان کیوں بنا ہوتا ہے؟ ٹرینوں کے آخری ڈبے پر

پاکستان ٹائمز! دنیا میں موجود ہر انسان نے کبھی نہ کبھی تو ٹرین کا سفر کیا ہو گا اور اسٹیشن پر کھڑی ٹرین کو یا پھر ٹرین گزرتی ہوئی دیکھی ہو گی اور اس ٹرین کے آخری ڈبے پر آپ نے ایکس کا نشان ، ایک چھوٹی سی بتی اور ایل وی لکھا ہو ا دیکھا ہو گا ۔ پر اس کا مطلب نہیں جانتے ہوں گے کہ یہ آخر کیوں لکھا جاتا ہے، آج ہم اس کے بارے میں دلچسپ معلومات آپکو فراہم کریں گے۔یہ ایکس کا نشان ہر مسافر ٹرین اور مال گاڑی کے پیچھے بنا ہوتا ہے، اس کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ ایک اسٹیشن سے دوسرے اسٹیشن تک ٹرین پوری آئی ہے کیونکہ اگر یہ نشان نہ ہوتو اسٹیشن پر موجود ریلوے حکام سمجھ جاتے ہیں ہے کہ ضرور ٹرین کے ساتھ کوئی حادثہ پیش آیا ہے جس کی وجہ سے ٹرین پوری اگلے اسٹیشن تک نہیں پہنچ سکی۔ یہ حادثہ کسی قسم کا بھی ہو سکتا ہے جیساکہ ٹرین کو کسی گورہ نے لوٹ لیا ہو، ٹرین پٹری سے اتر گئی ہو یا پھر ٹرین کسی کھائی وغیرہ میں گر گئی

ہو۔یہ نشان عموماََ سفید یا پیلے رنگ کا ہواتا ہے اور اس کا سائز بھی کافی بڑا ہوتا ہے۔اب ہم ایکس کے نشان سے مزید آگے بڑھتے ہیں اور بات کرتے ہیں بتی کے بارے میں کہ یہ بتی ٹرین کے آخری ڈبے پر کیوں لگی ہوتی ہے جب ایکس کا نشان موجود ہوتا ہے تو ، اس بتی کو لگانے کا مطلب یہ ہے کہ رات کے وقت میں تو ایکس کا نشان نظر نہیں آتا تو رات میں ٹرین کے آخری ڈبے پر یہ بتی یا لائٹ نصب ہوتی ہے تا دیکھ کر مطمئن ہو جائیں کہ ٹرین کو کوئی حادثہ پیش نہیں آیا۔اب ہم بات کرتے ہیں ایل وی کی، یہ بھی ٹرین کے آخری ڈبے پر انگریزی زبان میں لکھا ہوا ہوتا اس کا مطلب ہوتا ہے آخری ڈبہ، اس الفاظ لکھنے کا بھی یہی مقصد بھی یہی ہوتا ہے کہ جب ٹرین ایک سے دوسرے اسٹیشن پر آئے تو معلوم ہو جائے کے ٹرین مذکورہ اسٹیشن پر مکمل آئی ہے اور اس کو کوئی حادثہ درپیش نہیں آیا ۔یہ تینوں نشان ٹرین کے سب سے آخری ڈبے پر موجود ہوتے ہیں

سب سے اوپر اور درمیان میں ایکس بنا ہوا ہوتا ہے اور اسی ایکس کے نیچے ایک گول بتی (لائٹ) بنی ہو تی ہے اور پھر دائیں یا بائیں کسی طرف بھی ایل وی انگریزی زبان میں لکھا ہوتا ہے جبکہ زیادہ تر ایل وی دائیں ہاتھ کی طرف لکھا جاتا ہے۔

Leave a Comment