کیلے کا چھلکا کیلے سے زیادہ فائدہ مند ہوتا ہے۔ بہت سی بیماریوں کا واحد علاج

کیلے کا چھلکا

ڈیلی ٹائمز! دوستو ! کیلا ایک ایسا پھل ہے جو تقریباً پورا سال ہی دستیاب ہوتا ہے۔ اگر آپ اس پھل کے فوائد سے واقف نہیں ہیں تو پھر یہ ویڈیو آپ کے لیے ہی ہے۔ اگر آپ کو کیلے کا ذائقہ پسند نہیں بھی ہے پھر بھی آپ جلدی مسائل۔ بالوں کے مسائل۔ زخم اور چوٹ کے نشانوں کا نہ جا نا اور دانتوں کی بیماریوں سے جان چھڑانے کے لیے کیلا ضرور کھا نا چاہیے۔ لیکن شاہد آپ اس بات سے انجان ہوں کہ ایک پکے ہوئے کیلے سے زیادہ فائدہ مند کچا اور ہرا کیلا ہوتا ہے

اور ان دونوں سے ہی زیادہ فائدہ مند چیز کیلے کا چھلکا ہوتا ہے۔ آپ کی صحت سے جڑے بڑے بڑے مسائل اور چوٹوں کے پرانے نشان ختم کر کے جلد کو نارمل حالت میں لا نے کے لیے یہ چھلکا بہت ہی مفید ہے۔ ایسے افراد جو پورا سال ہی ڈائجیشن یعنی معدے کے مسائل سے دو چار رہتے ہوں تو ایسے افراد اگر ایک ہفتہ تواتر سے کیلے کھا ئیں تو معدے کی بہت سی بیماریوں سے چھٹکارا پا سکتے ہیں۔ اور صرف اتنا ہی نہیں ۔ اگر آپ کو کیلے کھانے کا درست طریقہ پتہ ہے تو پھر آپ گردوں کی بیماریوں ، دل کی بیماریوں اور شوگر کی بیماری سے محفوظ رہ سکتے ہیں۔ اگر آپ کے پاؤں یا ہاتھ کوئی کانٹا یا لکڑی کی پھانس چھب گئی ہو تو اسے نکالنے کے لیے سوئی سے کرید کر یا کٹ لگا کر نکا لا جاتا ہے

لیکن آپ صرف کیلے کی چھلکے کی مدد سے ہی یہ کانٹا بڑی آسانی سے نکال سکتے ہیں۔کل ملا کر اگر اس پھل کا جائزہ لیا جائے تو یہ عام سا نظر آنے والا پھل اپنے اندر بہت سی حیران کن فوائد رکھتا ہے۔جی تو ناظرین کیلے کھانے سے ہمارے جسم میں کیا کیا تبدیلیاں آتی ہیں اور کیلے کھانے کا صحیح وقت کون سا ہے اور کیا کیلے کے چھلکے کیلے سے بھی زیادہ فائدنہ مندہ ہیں؟ آج کی اس ویڈ یو میں ہم اسی موضوع پر بات کریں گے ۔ تو چلیں سب سے پہلے بات ہی کیلے کے چھلکوں سے شروع کرتے ہیں۔ کیلے کے چھلکوں کا ذائقہ تھوڑا کڑوا تو ہوتا ہے لیکن دنیا میں کئی علاقے ایسے بھی ہیں جہاں کیلا چھلکا سمیت کھا یا جاتا ہے۔ بہت سے لوگ ابا ل کر کر ۔ فرائی کر کے۔ اور سیک کر کر بھی کھاتے ہیں

۔ کیلا کا سالن بھی بنا کر کھا یا جاتا ہے۔ کیلوں کے چھلکوں میں وٹامن بی 6اور بی 12ہوتا ہے۔ ان وٹامنز کی کمی سے ہماری قوتِ مدافعت کمزور ہو جاتی ہے ۔ جس کی وجہ سے ہم بار بار بیمار پڑ تے ہیں۔ شدید جسمانی تھکاوٹ اور پٹھوں کی کمزوری آ جاتی ہے ۔ وٹامن بی 12کی کمی بڑھاپے میں بہت سی بیماریاں پیدا کرنے کی وجہ بنتی ہے۔ ان وٹامنز کے علاوہ کیلے میں Potasium and Maganisiumکی بھی بہت وافر مقدار مو جود ہوتی ہے۔ اسی لیے ہفتے میں کم ازکم ایک بار کیلوں کے چھلکوں کو ابا ل کر یا کیلے کے ساتھ ملا کر ضرور استعمال کر نا چاہیے۔

Leave a Comment