سوکھا دھنیا کو عام نہ سمجھیں،جانئے اس سے کونسی بڑی بیماریوں کا علاج ہوتا ہے؟

سوکھا دھنیا

ڈیلی ٹائمز! ایک ایسی جڑی بوٹی کے بارے میں بتا تے ہیں جس کو بہت عا م سمجھا جا تا ہے۔ جس کا کچن میں بہت استعما ل کیا جاتا ہے۔ قدرت نے کو ئی بھی چیز بلا ضرورت نہیں بنا ئی۔ ہر چیز اپنے اندر خو بیاں رکھتی ہے۔ اور کیسے ان عام چیزوں سے فائدہ لیا جاتا ہے۔ جس جڑی بوٹی کے بارے میں بات کر رہے ہیں وہ خشک دھنیاہے۔ جو کہ ہر سالن ، چاول اور کھانے میں استعما ل کیا جاتا ہے ۔

اور اس سے کیا فوائد حاصل کیے جاتے ہیں۔ سب سے پہلے دھنیا کے مختلف ناموں کے بار ے میں بتاتے ہیں۔ اس کے مضر اثرات کیا ہیں؟ اس کا مزاج کیاہے؟ فارسی میں کشنیز، بنگالی میں دھنے ، سندھی میں دھانا اور انگریزی میں کوری اینڈر کے نام سے جانا اور پکارا جاتا ہے۔ دھنیا بیج کی شکل میں ہو تا ہے۔ اس کے چھلکے اتار کر پیس کر مصالحوں اور دوائیوں میں استعما ل کیا جاتا ہے۔ اور اگر اس کے مزاج کے بارے میں بات کریں تو یہ دوسرے درجے میں سرد اور دوسرے درجے میں ہی خشک ہوتا ہے۔ اگر اس کو براؤن کر لیا جائے تو اس کے اثرات کم ہوتے ہیں۔ یہ شکنجبین اور سفر جل اس کے مصلحے کے طور پر استعما ل ہوتے ہیں۔

تخم خشخاس اور تخم کاہواس کا بدل ہیں۔ اب دھنیا کے کیا فوائد ہیں؟ اس کے بارے میں بات کرتے ہیں۔ دھنیا دماغی ٹانک ، نزلہ وزکام اور تھائی رائیڈ گلینڈز کے لیے استعمال ہوتا ہے۔ مارکیٹ میں طرفل کشنیز کے نام سے عام مل جاتی ہے۔ معدہ کے لیے بہت مفید ہےاور زکاوت حس کو دور کرتا ہے۔ جن لوگوں کے پٹھوںمیں کھچاؤ آرہاہو اور شریانوں میں تنا ؤ آرہا ہوں یعنی کے نس پر نس چڑھ جاتی ہو۔اور سوتےسوتے اس کو ابالنے کے بعد چھان لیں اور مریض کو پلا دیں۔ تو اسی وقت درد اور کھچاؤ میں آرام آجائے گا۔ اگر کسی کو یو ٹی آئی کا مسئلہ ہے یعنی پیشاب کی نالی میں سوزش اور جلن ہے۔ پیشاب جل کر یا تکلیف کے ساتھ آتا ہے۔

گردوں میں ہلکا ہلکا درد رہتا ہو۔تو اس کے لیے بہت مفید ہے۔ آپ ایک گلاس میں نیم گرم پانی لیں اور اس میں چھ گرام کوٹا ہو ا خشک دھنیا ڈال لیں۔ اورسفید صندل کا برادہ بھی پانچ سے چھ گرام ڈال لیں اور ساتھ ہی خشک آملہ کا پاؤڈر پانچ سے چھ گرام ڈال لیں۔ان تینوں چیزوں کو مکس کر لیں اور رات بھر کے لیے رکھ دیں۔ صبح اٹھ کر چھان لیں اور پی لیں۔ اس سے بہت فائدہ ہوگا۔اگر درد زیادہ ہورہاہو تو کچھ دن اس کا استعما ل کریں ۔ پانچ سال سے کم بچوں کو نہ دیں۔ اس سے بڑے بچوں کو دے سکتے ہیں۔ جن لوگوں کو کم سنتا ہو، بہرہ پن ہو، نظر کی کمزوری ہویا دماغی کمزوری ہو تو تین سے چار کالی مرچیں اور آدھا چمچ خشک دھنیا کوٹا ہوا

اور مرچیں بھی ساتھ کوٹ لیں۔اعصاب میں کھچاؤ آجاتا ہو۔ ایک پھر ایک گلاس پانی میں ڈال لیں اور ابال لیں ۔ جب آدھا گلاس رہ جائے تو چھان کر ایک کپ یا پیالی میں ڈال لیں۔ ذائقہ اچھا کر نے کے لیے کوزہ مصری کو ڈال لیں۔ یہ آمیزہ ایک پیالی صبح اور شام میں پی سکتے ہیں ۔ چند دن ہی میں رزلٹ ملنا شروع ہو جائے گا۔ جن لوگوں کا کولیسٹرول بڑھا ہو ا ہو یا ہائی بلڈ پریشر ہو تو اس کے خون کو پتلاکر تی ہے۔ ہاتھ اور پاؤں کی جلن کو ختم کرنے کے لیے خشک دھنیا اور مصری کے ساتھ سونف ملاکر اس پاؤڈر کا آدھا چمچ یعنی تین سے پانچ گرام صبح وشام پانی کے ساتھ لیں۔ اگر مسوڑوں سے خون آتا ہو تو دھنیا کے پانی سے کلی کریں تو مسوڑوں سے خون آنا بند ہوجائے گا۔

خشک دھنیا کو گردوں کی پتھری والے بھی استعما ل کرسکتے ہیں۔ کیونکہ یہ پیشا ب آور ہےاور پتھری ٹوٹ جاتی ہے۔ جن کا تھائی رائیڈ گلینڈز ٹھیک نہ ہورہا ہو تو وہ بھی خشک دھنیا واٹر استعمال کریں۔ تو بہت جلد ٹھیک ہو جائےگا۔ خشک دھنیا کا زیادہ استعمال بھی مناسب نہیں ہے۔گلاس پانی لیں اور اس میں ایک چمچ دھنیا ڈال لیں اور گرم کر لیں کولمبیا یونیورسٹی کے ماہرین نے مردوں میں خود امنیاتی حملے ( آٹوامیون اٹیک) کے بعد بال جھڑنے سے پیدا ہونے والے گنج پن کو ختم کرنے میں ایک غیرمعمولی کامیابی حاصل کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔یونیورسٹی کے میڈیکل سینٹر میں گنج پن کی ایک قسم ’ایلوپیشیا اریٹا‘ کو خاص اینزائم والی ایک دوا سے ختم کرنے کا تجربہ کیا گیا

جنہیں جینس کائنیز یا جے اے کے کہا جاتا ہے، چوہوں پر تجربات میں ثابت ہوا کہ یہ دوا آٹو امیون کے سگنل کو روکتی ہے اور جب دوا کی خاص مقدار لوگوں کو کھلائی گئی تو انمیں گنج پن بھی رک گیا اور ان کے بال دوبارہ اگنے لگے۔ماہرین کے مطابق جب دوا کو براہِ راست گنجے چوہوں کے سر پر لگایا گیا تو اس سے حیرت انگیز طور پر ان کے سروں پر بھرپور بال اگنے لگے 3 ماہ بعد چوہوں کے سارے بال دوبارہ لوٹ آئے۔ اس کے علاوہ جب تجربہ گاہوں میں مصنوعی طور پر بالوں کی افزائش کے لیے اس دوا کو ڈالا گیا تب بھی حیرت انگیز طور پر بال اگے۔ امریکی فوڈ اینڈ ڈرگ اتھارٹی نے اس دوا کو منظور کرلیا ہے۔ماہرین نے اپنی کاوش کو ایک تحقیق جرنل سائنس ایڈوانسس کی تازہ اشاعت میں پیش کیا ہے۔

ماہرین کے مطابق ان کی دوا میں موجود کیمیکل انسانی کھوپڑی کے مسام کھول کر بالوں کی بہت جلدی افزائش کرتے ہیں کیونکہ اس سے ان میں بال بنانے کا سگنل ’ کھل‘ جاتا ہے تاہم عمررسیدگی کے ساتھ عام گنج پن کا علاج ابھی دور ہے جس میں مرد اور خواتین میں بھی کھوپڑی کے خاص حصوں سے بال کم ہوتے جاتے ہیں اور اس کے لیے انہیں مزید تحقیق اور وقت درکار ہے جب کہ انہیں امید ہے کہ فی الحال یہ بالوں کو باریک ہونے اور گنج پن کو جزوی طور پر روک سکتی ہے۔واضح رہے کہ گنج پن کی بہت سی اقسام ہیں اور یہ دوا آٹو امین ایلوپیشیا کے لیے ہی مو¿ثر ہے جس میں انسان کا اپنا امنیاتی نظام ہی بالوں کا دشمن بن کر انہیں گرانے لگتا ہے اور سر پر ایک سکے جتنا گنج پن ہوجاتا ہے جو بعض صورتوں میں بہت پھیل جاتا ہے۔

Leave a Comment